Skip to main content

Salam Aqeedat

 Salaam Aqeedat مرے کلام پہ حمد و ثناء کا سایہ ہے  مرے کریم کے لطف و عطاء کا سایہ ہے میں حمد و منقبت و نعت لکھ رہا ہوں،  میرے تخیلات شاه ھدی کا سایہ ہے لکھا ہے حسن جہاں، اُس کو پڑھ چکا ہوں  حسن کیں پہ خامس آل عبا کا سایہ ہے خدا نے ہم کو نوازا حواس خمسہ سے  یہ ہم پہ پنجتن با صفا کا سایہ ہے کوئی مریض ہو لے جا رضا کے روضے پر  وہیں طبیب ہے، دار الشفاء کا سایہ ہے سفر ہو یا ہو حضر مجھ کو کوئی خوف نہیں  کہ مجھ پہ شاہ نجف مرتضی کا سایہ ہے علی امام مرا، اور میں غلام علی  علی کی شان پر تو لافتی کا سایہ ہے علی کا نام تو حرز بدن ہے اپنے لیے  علی کے اسم پہ رب علی کا سایہ ہے ن لطف احمد مرسل بفضل آل رسول  میں خوش نصیب ہوں مجھ پر ہما کا سایہ ہے وہی ہے نفس پیمبر وہی ہے زوج بتول  علی کی ذات پر ہی ہل اتی کا سایہ ہے ریاض خلد کے سردار شبر و شبیر  حدیث پاک ہے، خیر الوریٰ کا سایہ ہے سفیر کرب و بلا، زینب حزیں پہ سلام  وہ جس کے عزم پہ خیر النسا " کا سایہ ہے تری دعا کی اجابت میں دیر کیا ہو گی  علی کا نام لے! حاجت روا کا سایہ ہے نجات پائے گا ہر دکھ سے تو نہ رہ ناشاد  کہ تجھ پہ رحمت ارض و سماء کا سایہ ہے mar

Salam Aqeedat

 Salaam Aqeedat

مرے کلام پہ حمد و ثناء کا سایہ ہے
 مرے کریم کے لطف و عطاء کا سایہ ہے

میں حمد و منقبت و نعت لکھ رہا ہوں، 
میرے تخیلات شاه ھدی کا سایہ ہے

لکھا ہے حسن جہاں، اُس کو پڑھ چکا ہوں
 حسن کیں پہ خامس آل عبا کا سایہ ہے

خدا نے ہم کو نوازا حواس خمسہ سے 
یہ ہم پہ پنجتن با صفا کا سایہ ہے

کوئی مریض ہو لے جا رضا کے روضے پر 
وہیں طبیب ہے، دار الشفاء کا سایہ ہے

سفر ہو یا ہو حضر مجھ کو کوئی خوف نہیں 
کہ مجھ پہ شاہ نجف مرتضی کا سایہ ہے

علی امام مرا، اور میں غلام علی
 علی کی شان پر تو لافتی کا سایہ ہے

علی کا نام تو حرز بدن ہے اپنے لیے
 علی کے اسم پہ رب علی کا سایہ ہے

ن لطف احمد مرسل بفضل آل رسول 
میں خوش نصیب ہوں مجھ پر ہما کا سایہ ہے

وہی ہے نفس پیمبر وہی ہے زوج بتول 
علی کی ذات پر ہی ہل اتی کا سایہ ہے

ریاض خلد کے سردار شبر و شبیر
 حدیث پاک ہے، خیر الوریٰ کا سایہ ہے

سفیر کرب و بلا، زینب حزیں پہ سلام 
وہ جس کے عزم پہ خیر النسا " کا سایہ ہے

تری دعا کی اجابت میں دیر کیا ہو گی 
علی کا نام لے! حاجت روا کا سایہ ہے

نجات پائے گا ہر دکھ سے تو نہ رہ ناشاد
 کہ تجھ پہ رحمت ارض و سماء کا سایہ ہے

marey kalaam pay hamd o sana ka saya hai
marey kareem ke lutaf o Ata ka saya hai

mein hamd o Munqabat o naat likh raha hon ,
mere takhayulaat شاه ھدی ka saya hai

likha hai husn jahan, uss ko parh chuka hon
husn kee pay Khamiss all Aba ka saya hai

kkhuda ne hum ko nawaza hawaas Khamsa se
yeh hum pay panjtan ba Safa ka saya hai

koi mareez ho le ja Raza ke roze par
wahein tabeb hai, daar الشفاء ka saya hai

safar ho ya ho Hazr mujh ko koi khauf nahi
ke mujh pay Shah Najaf Murteza ka saya hai

Ali imam mra, aur mein ghulam Ali
Ali ki shaan par to لافتی ka saya hai

Ali ka naam to Hirz badan hai –apne liye
Ali ke ism pay rab Ali ka saya hai

noon lutaf Ahmed marsal بفضل all rasool
mein khush naseeb hon mujh par humma ka saya hai

wohi hai nafs peyambar wohi hai zoj batool
Ali ki zaat par hi hil at‬ ka saya hai

Riaz Khuld ke sardar Shabbir o Shabir
hadees pak hai, kher alori ka saya hai

safeer karb o bulaa, zainab حزیں pay salam
woh jis ke azm pay kher Alnisa " ka saya hai

tri dua ki ajabat mein der kya ho gi
Ali ka naam le! haajat rava ka saya hai

nijaat paye ga har dukh se to nah reh Nashad
ke tujh pay rehmat arz o Samah ka saya hai

 ہو تذکرہ کہیں جب انصار و اقربا کا
 آتا ہے نام پہلے عباس یا وفا کا

ام البنین کا دلبر، شیر خدا کا بیٹا
 کیسے کروں ادا حق میں آپ کی ثناء کا

صورت میں ماہ ہاشم، سیرت میں مثل شبر 
جرات میں ہو بہو ہے ثانی وہ مرتضی کا

کرب و بلا کے بن میں ایک شور العطش ہے 
پیاسا ہے تین دن سے گھر بار مصطفی کا

بچوں کو پانی لانے عباس جا رہے ہیں
 لشکر وہ سامنے ہے افواج اشقیا کا

شانے یہ مشک لے کر اور ہاتھ میں علم کو
 کیا زور کر و فر ہے اُس صاحب لوا کا

میدان کربلا میں بھگدڑ کی بچ گئی ہے
 اُترا جو علقمہ پر ساتی وہ نینوا کا

موجیں اُچھل اچھل کر تعظیم کر رہی ہیں
 سایہ پڑا جو اُن پر اُس شاہ مہ لقا کا

نہر فرات تجھ پر تف ہو ترے کنارے
 پیاسا رہا کئی دن کتبہ شہ ھدی کا

مہماں بنا کے اُن کو لائے ہو کربلا میں
 اے شام کوفہ والو! ڈر کیوں نہیں خدا کا ؟

اپنے حرم کی مجھ کو چوکھٹ نصیب فرما 
ہو مولا سردار اولیا کا صدقہ عطا

اے کربلا کے غازی ناشاد پر کرم ہو
 دیتا ہوں واسطہ میں بیمار کربلا کا

ho tazkara kahin jab Ansar o uqarba ka
aata hai naam pehlay abbas ya wafa ka

umm البنین ka dilbar, sher kkhuda ka beta
kaisay karoon ada haq mein aap ki sana ka

soorat mein mah hashim, seerat mein misl Shabbir
jurrat mein ho baho hai sani woh Murteza ka

karb o bulaa ke ban mein aik shore alatsh hai
piyasa hai teen din se ghar baar mustafa ka

bachon ko pani laane abbas ja rahay hain
lashkar woh samnay hai afwaj اشقیا ka

shanay yeh mushk le kar aur haath mein ilm ko
kya zor kar o fir hai uss sahib lawa ka

maidan karbalaa mein bhagdar ki bach gayi hai
utra jo alqmh par satie woh ninwa ka

moajain uchhal uchhal kar tazeem kar rahi hain
saya para jo unn par uss Shah Meh Laqa ka

neher furaat tujh par taf ho tre kinare
piyasa raha kayi din kutba sheh ھدی ka

mehmaan bana ke unn ko laaye ho karbalaa mein
ae shaam koofa walo! dar kyun nahi kkhuda ka ?

–apne haram ki mujh ko chokhat naseeb farma
ho maula sardar Aolia ka sadqa ataa

ae karbalaa ke ghazi Nashad par karam ho
deta hon vaastaa mein bemaar karbalaa ka

Comments

Popular posts from this blog

300+ Best Quotes in Urdu with Images 2023

300+ Best Quotes in Urdu with Images 2023 Iss Post ma ham apky Urdu kay 300 behtreen or nayaab Quotes share karen gay. Ap tamam se guzarish ha ki is post ko apny friends or family kay sath zaroor share karen. Or hamein shukurya ada karny ka moqa den. shukurya...  

Salam Ba Hazoor Imam Hussain

 Salam Ba Hazoor Imam Hussain مہماں بنا کے گھر سے بلایا حسین کو  پھر کربلا کے بن میں بسایا حسین کو یہ قافلہ تھا کوفے کی جانب رواں دواں  کر کربلا میں گھیر کے لایا حسین کو وہ دلبر بتول تھا اور جان مصطفى  کیا جرم تھا یہی کہ بتایا حسین کو عباس اور قاسم واکبر ہوئے شہید  اصغر نے تیر کھا کے رلایا حسین کو رقم سب چل بسے ظہیر و بریر و حبیب تک  کوئی نہیں رہا تھا سہارا حسین کو تنہا نکل رہا ہے حرم سے علی کا لال  گھیرے ہوئے ہے فوج صف آراء حسین کو وہ جنگ کی، کہ بدر کا منظر دکھا دیا  ہر اک نے الامان پکارا حسین کو اتنے میں ماہ دین گہن میں چلا گی  تیغ و تبر سے تیر سے مارا حسین کو نہر فرات پاس تھی پانی نہیں  پیاسا کیا شہید دل آرا حسین کو اے کربلا حسین نے تجھ کو لہو دیا  تو نے نہ ایک قطرہ پلایا حسین کو  زہرا کے کے گلبدن کا بدن بے کفن کو  تپتی زمین پر نہ چھپایا حسین کا جس دل میں عشق سبط نبی کا سما گیا  اس دل نے پھر کبھی نہ بھلایا حسین ن کو ناشاد ناتواں کو زیارت نصیب  یہ التماس بھیجی ہے مولا حسین کو mehmaan bana ke ghar se bulaya Hussain ko phir karbalaa ke ban mein basaayaa Hussain ko yeh qaafla tha kofe k