Skip to main content

Salam Aqeedat

 Salaam Aqeedat مرے کلام پہ حمد و ثناء کا سایہ ہے  مرے کریم کے لطف و عطاء کا سایہ ہے میں حمد و منقبت و نعت لکھ رہا ہوں،  میرے تخیلات شاه ھدی کا سایہ ہے لکھا ہے حسن جہاں، اُس کو پڑھ چکا ہوں  حسن کیں پہ خامس آل عبا کا سایہ ہے خدا نے ہم کو نوازا حواس خمسہ سے  یہ ہم پہ پنجتن با صفا کا سایہ ہے کوئی مریض ہو لے جا رضا کے روضے پر  وہیں طبیب ہے، دار الشفاء کا سایہ ہے سفر ہو یا ہو حضر مجھ کو کوئی خوف نہیں  کہ مجھ پہ شاہ نجف مرتضی کا سایہ ہے علی امام مرا، اور میں غلام علی  علی کی شان پر تو لافتی کا سایہ ہے علی کا نام تو حرز بدن ہے اپنے لیے  علی کے اسم پہ رب علی کا سایہ ہے ن لطف احمد مرسل بفضل آل رسول  میں خوش نصیب ہوں مجھ پر ہما کا سایہ ہے وہی ہے نفس پیمبر وہی ہے زوج بتول  علی کی ذات پر ہی ہل اتی کا سایہ ہے ریاض خلد کے سردار شبر و شبیر  حدیث پاک ہے، خیر الوریٰ کا سایہ ہے سفیر کرب و بلا، زینب حزیں پہ سلام  وہ جس کے عزم پہ خیر النسا " کا سایہ ہے تری دعا کی اجابت میں دیر کیا ہو گی  علی کا نام لے! حاجت روا کا سایہ ہے نجات پائے گا ہر دکھ سے تو نہ رہ ناشاد  کہ تجھ پہ رحمت ارض و سماء کا سایہ ہے mar

urdu new hamad

Urdu New Hamad

Rehman to Raheem to aur Zuljilal hai
rab kareem to hi jamal o kamaal hai

mujh ko Sapas o hamd ki tofeq day sada
teri ataa nah ho to meri kya majaal hai

taseer di zabaan ko, aankhon ko roshni
tairay baghair saans bhi lena mahaal hai

kon o makaan, kin se hi peda kiye gaye
to maalik yakoon, bulaa qail o qaal hai

meri khataon aur gunaaho ko bakhash day
to Afoo o dar guzar mein bara be misaal hai

hamd kkhuda o naat nabi madah اهلبیت
likhta rahon hamesha yeh mera kamaal hai

rehmat ho mujh pay rehmat aalam ke wastay
dono jahan mein jis se mra Itsaal hai

hum na samajh hain, qoum ki kashti bhanwar mein hai
hum par tri nigah karam hasb haal hai

arz watan se khauf ke baadal utha day ab
tairay karam se husn talluq bahaal hai

Nashad hum mein koi nahi, saaray shaad hain
hum sab ka jab waseela محمدؐ ki all hai

رحمان تو رحیم تو اور ذوالجلال ہے

 رب کریم تو ہی جمال و کمال ہے


مجھ کو سپاس و حمد کی توفیق دے سدا

تیری عطا نہ ہو تو مری کیا مجال ہے


تاثیر دی زبان کو، آنکھوں کو روشنی

تیرے بغیر سانس بھی لینا محال ہے


کون و مکان، کن سے ہی پیدا کیے گئے

تو مالک یکون، بلا قیل و قال ہے


میری خطاؤں اور گناہوں کو بخش دے

تو عفو و درگزر میں بڑا بے مثال ہے


حمد خدا و نعت نبی مدح اهلبیت

 لکھتا رہوں ہمیشہ یہ میرا کمال ہے


رحمت ہو مجھ پہ رحمت عالم کے واسطے 

دونوں جہاں میں جس سے مرا اتصال ہے


ہم نا سمجھ ہیں، قوم کی کشتی بھنور میں ہے

 ہم پر تری نگاہ کرم حسب حال ہے


ارضِ وطن سے خوف کے بادل اٹھا دے اب 

تیرے کرم سے حسنِ تعلق بحال ہے


ناشاد ہم میں کوئی نہیں، سارے شاد ہیں 

ہم سب کا جب وسیلہ محمدؐ کی آل ہے

ضیائے haq se hai par noor Ahmed kkhuda ke deen ka dastoor Ahmed

wohi rehmat banay hain عالمیں ke zay haq rehmat pay hai mamoor Ahmed

rahega deen yeh taa hashar qaim hai is ka nasir o mansoor Ahmed

sadaqat aur amanat mein hain yaktaa bhari duniya mein hain mashhoor Ahmed

kahin yaseen kahin ba ism طه quran pak mein mazkoor Ahmed

kkhuda tha mizban aur aap mehmaan gaye mairaaj tak مرور Ahmed

mili tohfay mein jab Muftah jannat hue hain Faiz maamoor Ahmed

اشاره jab karen mehtaab shaqq ho kkhuda ko is qader Manzoor Ahmed

shab hijrat madeeney mein, watan mein hue kufar ke mahsor Ahmed

Ali ko –apne bistar par sulaa kar hijrat talak majboor Ahmed hue

على hai mand Ahmed ke Laiq Ali ki zaat mein par noor Ahmed

kkhuda ne unn ko di hijrat mein barket masaaib se hue aabb daur Ahmed

meri adna ki is kawish ko aaqa !

karen maqbool aur Manzoor Ahmed !

kere Nashad ko dar roz Mahshar
bah all mustafa Mahshoor Ahmed !

ضیائے حق سے ہے پر نور احمد خدا کے دین کا دستور احمد

وہی رحمت بنے ہیں عالمیں کے ز حق رحمت پہ ہے مامور احمد

رہیگا دین یہ تا حشر قائم ہے اس کا ناصر و منصور احمد

صداقت اور امانت میں ہیں یکتا بھری دنیا میں ہیں مشہور احمد

کہیں یسین کہیں با اسم طه قرآن پاک میں مذکور احمد

خدا تھا میزباں اور آپ مہماں گئے معراج تک مرور احمد

ملی تحفے میں جب مفتاح جنت ہوئے ہیں فیض عمور احمد

اشاره جب کریں مہتاب شق ہو خدا کو اس قدر منظور احمد

شب ہجرت مدینے میں، وطن میں ہوئے کفار کے محصور احمد

علی کو اپنے بستر پر سلا کر ہجرت تلک مجبور احمد ہوئے

على ہے مند احمد کے لائق علی کی ذات میں پر نور احمد

خدا نے اُن کو دی ہجرت میں برکت مصائب سے ہوئے آب دور احمد

مری ادنی کی اس کاو کو آقا!

کریں مقبول اور منظور احمد !

کرے ناشاد کو در روز محشر 

بہ آل مصطفی محشور احمد !

Comments

Popular posts from this blog

300+ Best Quotes in Urdu with Images 2023

300+ Best Quotes in Urdu with Images 2023 Iss Post ma ham apky Urdu kay 300 behtreen or nayaab Quotes share karen gay. Ap tamam se guzarish ha ki is post ko apny friends or family kay sath zaroor share karen. Or hamein shukurya ada karny ka moqa den. shukurya...  

Salam Ba Hazoor Imam Hussain

 Salam Ba Hazoor Imam Hussain مہماں بنا کے گھر سے بلایا حسین کو  پھر کربلا کے بن میں بسایا حسین کو یہ قافلہ تھا کوفے کی جانب رواں دواں  کر کربلا میں گھیر کے لایا حسین کو وہ دلبر بتول تھا اور جان مصطفى  کیا جرم تھا یہی کہ بتایا حسین کو عباس اور قاسم واکبر ہوئے شہید  اصغر نے تیر کھا کے رلایا حسین کو رقم سب چل بسے ظہیر و بریر و حبیب تک  کوئی نہیں رہا تھا سہارا حسین کو تنہا نکل رہا ہے حرم سے علی کا لال  گھیرے ہوئے ہے فوج صف آراء حسین کو وہ جنگ کی، کہ بدر کا منظر دکھا دیا  ہر اک نے الامان پکارا حسین کو اتنے میں ماہ دین گہن میں چلا گی  تیغ و تبر سے تیر سے مارا حسین کو نہر فرات پاس تھی پانی نہیں  پیاسا کیا شہید دل آرا حسین کو اے کربلا حسین نے تجھ کو لہو دیا  تو نے نہ ایک قطرہ پلایا حسین کو  زہرا کے کے گلبدن کا بدن بے کفن کو  تپتی زمین پر نہ چھپایا حسین کا جس دل میں عشق سبط نبی کا سما گیا  اس دل نے پھر کبھی نہ بھلایا حسین ن کو ناشاد ناتواں کو زیارت نصیب  یہ التماس بھیجی ہے مولا حسین کو mehmaan bana ke ghar se bulaya Hussain ko phir karbalaa ke ban mein basaayaa Hussain ko yeh qaafla tha kofe k

Salam Aqeedat

 Salaam Aqeedat مرے کلام پہ حمد و ثناء کا سایہ ہے  مرے کریم کے لطف و عطاء کا سایہ ہے میں حمد و منقبت و نعت لکھ رہا ہوں،  میرے تخیلات شاه ھدی کا سایہ ہے لکھا ہے حسن جہاں، اُس کو پڑھ چکا ہوں  حسن کیں پہ خامس آل عبا کا سایہ ہے خدا نے ہم کو نوازا حواس خمسہ سے  یہ ہم پہ پنجتن با صفا کا سایہ ہے کوئی مریض ہو لے جا رضا کے روضے پر  وہیں طبیب ہے، دار الشفاء کا سایہ ہے سفر ہو یا ہو حضر مجھ کو کوئی خوف نہیں  کہ مجھ پہ شاہ نجف مرتضی کا سایہ ہے علی امام مرا، اور میں غلام علی  علی کی شان پر تو لافتی کا سایہ ہے علی کا نام تو حرز بدن ہے اپنے لیے  علی کے اسم پہ رب علی کا سایہ ہے ن لطف احمد مرسل بفضل آل رسول  میں خوش نصیب ہوں مجھ پر ہما کا سایہ ہے وہی ہے نفس پیمبر وہی ہے زوج بتول  علی کی ذات پر ہی ہل اتی کا سایہ ہے ریاض خلد کے سردار شبر و شبیر  حدیث پاک ہے، خیر الوریٰ کا سایہ ہے سفیر کرب و بلا، زینب حزیں پہ سلام  وہ جس کے عزم پہ خیر النسا " کا سایہ ہے تری دعا کی اجابت میں دیر کیا ہو گی  علی کا نام لے! حاجت روا کا سایہ ہے نجات پائے گا ہر دکھ سے تو نہ رہ ناشاد  کہ تجھ پہ رحمت ارض و سماء کا سایہ ہے mar