Skip to main content

Salam Aqeedat

 Salaam Aqeedat مرے کلام پہ حمد و ثناء کا سایہ ہے  مرے کریم کے لطف و عطاء کا سایہ ہے میں حمد و منقبت و نعت لکھ رہا ہوں،  میرے تخیلات شاه ھدی کا سایہ ہے لکھا ہے حسن جہاں، اُس کو پڑھ چکا ہوں  حسن کیں پہ خامس آل عبا کا سایہ ہے خدا نے ہم کو نوازا حواس خمسہ سے  یہ ہم پہ پنجتن با صفا کا سایہ ہے کوئی مریض ہو لے جا رضا کے روضے پر  وہیں طبیب ہے، دار الشفاء کا سایہ ہے سفر ہو یا ہو حضر مجھ کو کوئی خوف نہیں  کہ مجھ پہ شاہ نجف مرتضی کا سایہ ہے علی امام مرا، اور میں غلام علی  علی کی شان پر تو لافتی کا سایہ ہے علی کا نام تو حرز بدن ہے اپنے لیے  علی کے اسم پہ رب علی کا سایہ ہے ن لطف احمد مرسل بفضل آل رسول  میں خوش نصیب ہوں مجھ پر ہما کا سایہ ہے وہی ہے نفس پیمبر وہی ہے زوج بتول  علی کی ذات پر ہی ہل اتی کا سایہ ہے ریاض خلد کے سردار شبر و شبیر  حدیث پاک ہے، خیر الوریٰ کا سایہ ہے سفیر کرب و بلا، زینب حزیں پہ سلام  وہ جس کے عزم پہ خیر النسا " کا سایہ ہے تری دعا کی اجابت میں دیر کیا ہو گی  علی کا نام لے! حاجت روا کا سایہ ہے نجات پائے گا ہر دکھ سے تو نہ رہ ناشاد  کہ تجھ پہ رحمت ارض و سماء کا سایہ ہے mar

Shaan Ali

 Shaan Ali

علی نے مرحب و عشر کو مارا اکھاڑا آپ نے خیبر کا در ہے
 
نبی ہے صاحب معراج بے شک 
 علی بھی تو انہی کا على ہے ہم سفر ہے 

علی ہے مطلع نظم امامت
 نبوت کا نبی مقطع اگر ہے 

علی نے شمس کو پلٹا دیا ہے
شق القمر محمد صاحب ہے

شب ہجرت تھے بستر پر نبی کے
علی کی نیند بے خوف و خطر ہے

علی مشکل کشا دونوں جہاں کے
قسیم کوثر و خُلد و سفر ہے

علی کی راہ غافل ہوئے، تب
مسلماں کُفر کا دست نگر ہے

بہ فرمان نبی حکم الٰہی
علی مولائے ہر جن و بشر ہے

بچانا ! یا علی میرے وطن کو 
عدو ہر سمت سے سرگرم شر ہے

یہاں تو بے گناہوں کے لہو سے 
چمن کا ذرہ ذرہ آج تر ہے

مری آسودگی، یہ سرفرازی 
مرے مولا، تیرا فیض نظر ہے

چمن میرا ہو پھر سے شاد و آباد 
دعا ناشاد کی شام و سحر ہے

Ali ne مرحب o ashr ko mara akhara aap ne Khyber ka dar hai

nabi hai sahib mairaaj be shak
Ali bhi to unhi ka على hai hum safar hai

Ali hai mutala nazam imamat
nabuwat ka nabi mqtaa agar hai

Ali ne Shams ko palta diya hai
shaqq al qamar Mohammad sahib hai

shab hijrat thay bistar par nabi ke
Ali ki neend be khauf o khatar hai

Ali mushkil kusha dono jahan ke
Qaseem kusar o khuld o safar hai

Ali ki raah ghaafil hue, tab
musalmaan kufar ka dast nagar hai

bah farmaan nabi hukum Ellahi
Ali molaye har jin o bashar hai

bachana! ya Ali mere watan ko
ado har simt se sargaram shar hai

yahan to be gunaaho ke lahoo se
chaman ka zarra zarra aaj tar hai

meri aasoudgi, yeh sarfarazi
marey maula, tera Faiz nazar hai

chaman mera ho phir se shaad o abad
dua Nashad ki shaam o sehar hai

Comments

Popular posts from this blog

300+ Best Quotes in Urdu with Images 2023

300+ Best Quotes in Urdu with Images 2023 Iss Post ma ham apky Urdu kay 300 behtreen or nayaab Quotes share karen gay. Ap tamam se guzarish ha ki is post ko apny friends or family kay sath zaroor share karen. Or hamein shukurya ada karny ka moqa den. shukurya...  

Salam Ba Hazoor Imam Hussain

 Salam Ba Hazoor Imam Hussain مہماں بنا کے گھر سے بلایا حسین کو  پھر کربلا کے بن میں بسایا حسین کو یہ قافلہ تھا کوفے کی جانب رواں دواں  کر کربلا میں گھیر کے لایا حسین کو وہ دلبر بتول تھا اور جان مصطفى  کیا جرم تھا یہی کہ بتایا حسین کو عباس اور قاسم واکبر ہوئے شہید  اصغر نے تیر کھا کے رلایا حسین کو رقم سب چل بسے ظہیر و بریر و حبیب تک  کوئی نہیں رہا تھا سہارا حسین کو تنہا نکل رہا ہے حرم سے علی کا لال  گھیرے ہوئے ہے فوج صف آراء حسین کو وہ جنگ کی، کہ بدر کا منظر دکھا دیا  ہر اک نے الامان پکارا حسین کو اتنے میں ماہ دین گہن میں چلا گی  تیغ و تبر سے تیر سے مارا حسین کو نہر فرات پاس تھی پانی نہیں  پیاسا کیا شہید دل آرا حسین کو اے کربلا حسین نے تجھ کو لہو دیا  تو نے نہ ایک قطرہ پلایا حسین کو  زہرا کے کے گلبدن کا بدن بے کفن کو  تپتی زمین پر نہ چھپایا حسین کا جس دل میں عشق سبط نبی کا سما گیا  اس دل نے پھر کبھی نہ بھلایا حسین ن کو ناشاد ناتواں کو زیارت نصیب  یہ التماس بھیجی ہے مولا حسین کو mehmaan bana ke ghar se bulaya Hussain ko phir karbalaa ke ban mein basaayaa Hussain ko yeh qaafla tha kofe k

Salam Aqeedat

 Salaam Aqeedat مرے کلام پہ حمد و ثناء کا سایہ ہے  مرے کریم کے لطف و عطاء کا سایہ ہے میں حمد و منقبت و نعت لکھ رہا ہوں،  میرے تخیلات شاه ھدی کا سایہ ہے لکھا ہے حسن جہاں، اُس کو پڑھ چکا ہوں  حسن کیں پہ خامس آل عبا کا سایہ ہے خدا نے ہم کو نوازا حواس خمسہ سے  یہ ہم پہ پنجتن با صفا کا سایہ ہے کوئی مریض ہو لے جا رضا کے روضے پر  وہیں طبیب ہے، دار الشفاء کا سایہ ہے سفر ہو یا ہو حضر مجھ کو کوئی خوف نہیں  کہ مجھ پہ شاہ نجف مرتضی کا سایہ ہے علی امام مرا، اور میں غلام علی  علی کی شان پر تو لافتی کا سایہ ہے علی کا نام تو حرز بدن ہے اپنے لیے  علی کے اسم پہ رب علی کا سایہ ہے ن لطف احمد مرسل بفضل آل رسول  میں خوش نصیب ہوں مجھ پر ہما کا سایہ ہے وہی ہے نفس پیمبر وہی ہے زوج بتول  علی کی ذات پر ہی ہل اتی کا سایہ ہے ریاض خلد کے سردار شبر و شبیر  حدیث پاک ہے، خیر الوریٰ کا سایہ ہے سفیر کرب و بلا، زینب حزیں پہ سلام  وہ جس کے عزم پہ خیر النسا " کا سایہ ہے تری دعا کی اجابت میں دیر کیا ہو گی  علی کا نام لے! حاجت روا کا سایہ ہے نجات پائے گا ہر دکھ سے تو نہ رہ ناشاد  کہ تجھ پہ رحمت ارض و سماء کا سایہ ہے mar