Skip to main content

Salam Aqeedat

 Salaam Aqeedat مرے کلام پہ حمد و ثناء کا سایہ ہے  مرے کریم کے لطف و عطاء کا سایہ ہے میں حمد و منقبت و نعت لکھ رہا ہوں،  میرے تخیلات شاه ھدی کا سایہ ہے لکھا ہے حسن جہاں، اُس کو پڑھ چکا ہوں  حسن کیں پہ خامس آل عبا کا سایہ ہے خدا نے ہم کو نوازا حواس خمسہ سے  یہ ہم پہ پنجتن با صفا کا سایہ ہے کوئی مریض ہو لے جا رضا کے روضے پر  وہیں طبیب ہے، دار الشفاء کا سایہ ہے سفر ہو یا ہو حضر مجھ کو کوئی خوف نہیں  کہ مجھ پہ شاہ نجف مرتضی کا سایہ ہے علی امام مرا، اور میں غلام علی  علی کی شان پر تو لافتی کا سایہ ہے علی کا نام تو حرز بدن ہے اپنے لیے  علی کے اسم پہ رب علی کا سایہ ہے ن لطف احمد مرسل بفضل آل رسول  میں خوش نصیب ہوں مجھ پر ہما کا سایہ ہے وہی ہے نفس پیمبر وہی ہے زوج بتول  علی کی ذات پر ہی ہل اتی کا سایہ ہے ریاض خلد کے سردار شبر و شبیر  حدیث پاک ہے، خیر الوریٰ کا سایہ ہے سفیر کرب و بلا، زینب حزیں پہ سلام  وہ جس کے عزم پہ خیر النسا " کا سایہ ہے تری دعا کی اجابت میں دیر کیا ہو گی  علی کا نام لے! حاجت روا کا سایہ ہے نجات پائے گا ہر دکھ سے تو نہ رہ ناشاد  کہ تجھ پہ رحمت ارض و سماء کا سایہ ہے mar

madh e Nabi o Ali

 Madh e Nabi o Ali

علی سردار و شاه اولیا ہے 
وہی ہے، جو نصیری کا خدا ہے
 نبی نے دوش پر حیدر کو لے کر
 بتوں سے کعبہ خالی کر دیا ہے
امامت دیکھ کے بر دوش نبوت
کسے یہ مرتبہ حاصل ہوا ہے
علی نے اژدہا بچپن میں چیرا 
ید اللہ کا لقب اُن کو ملا ہے 
خدا نے تیغ دی، بیٹی نبی نے 
على داماد خیر الانبيا ہے
علی ہے بانوئے جنت کا ہمسر
وہی تو شافع روز جزا ہے
أحد ہو، بدر ہو، خندق ہو، خیبر 
على ہر جنگ میں صاحب لوا ہے 
محمد اور علی خیر البشر ہیں
 انہیں کے واسطے عالم بنا ہے
اگر مقطع ہے احمد انبیا کا 
تو حیدر مطلع کل اولیا ہے
على ہی نور خالق نور احمد 
خدا کے گھر میں جو پیدا ہوا ہے
امام شافعی نے مرتضی کو 
قسیم النار والجنہ کہا ہے
علی دنیا کا مرد مجاہد 
جسے تریخ دو سر رب کی عطا ہے
علی نے بدر کا میدان ما را 
زحق اعزاز اُن کو لا فتی ہے
محمد اور على حسنين و زہرا 
انہی کی شان میں تو ہل اتی ہے
ملا ناشاد ذوق مدح گوئی 
یہ تجھ پر لطف آل مصطفی ہے

Ali sardar o شاه Aolia hai
wohi hai, jo Nasiry ka kkhuda hai
nabi ne dosh par Haider ko le kar
buton se kaaba khaali kar diya hai
imamat dekh ke Bar dosh nabuwat
kisay yeh martaba haasil sun-hwa hai
Ali ne اژدہا bachpan mein cheera
‫d Allah ka laqab unn ko mila hai
kkhuda ne tegh di, beti nabi ne
على damaad kher الانبیا hai
Ali hai بانوئے jannat ka humsar
wohi to Shafey roz jaza hai
أحد ho, badar ho, khandaq ho, Khyber
على har jung mein sahib lawa hai
Mohammad aur Ali kher al-bashr hain
inhen ke wastay aalam bana hai
agar mqtaa hai Ahmed Anabia ka
to Haider mutala kal Aolia hai
على hi noor khaaliq noor Ahmed
kkhuda ke ghar mein jo peda sun-hwa hai
imam Shafi ne Murteza ko
Qaseem النار والجنہ kaha hai
Ali duniya ka mard Mujahid
jisay تریخ do sir rab ki ataa hai
Ali ne badar ka maidan ma ra
زحق aizaz unn ko laa Fataa hai
Mohammad aur على hasnain o Zohra
unhi ki shaan mein to hil at‬ hai
mila Nashad zouq madah goi
yeh tujh par lutaf all mustafa hai

علی کا نام حرز پُر اثر ہے
على نفس نبي خير البشر ہے

علی کی ذات ہے مولود کعبہ
 شہادت گاہ بھی خالق کا گھر ہے

علی تو محرم راز خدا ہے 
اُسی کے سامنے ہر خشک و تر ہے

علی کی مدح ہے یو فون بالنذر
مدلل اور مکمل یہ خبر ہے

نبی کی شان خبر علم ہونا
در ہے علی مشکل کشا ہی اُس کا

على حق، حق علی قول پیمبر جدھر ہو گا علی، حق بھی اُدھر ہے

علی کا نور ہے نور الہی
خدا کے نور کا یہ بھی ثمر ہے

محمد اور علی کے نور ہی
منور جلوه شمس و قمر ہے

انہیں کے فیض خالق نے بخشی
ہمیں كائنات بحر و بر ہے یہ

محمد شارع دین مقدس  
علی حاکم ہے اس کا خوب تر ہے

نفاذ دین کی خاطر جہاں میں 
خدا نے اُن کو دی تیغ دوسر ہے

علی ہی ہر جگہ رزم و وغا میں
محمد کے لیے سینہ پر ہے

کیا مولا علی نے اس جہاں میں نظام ظلم کو زیر و زیر ہے

 علی کے نام کا صدقہ ہے یہ 
رعونت کو ہزیمیت کا جو ڈر ہے

Ali ka naam Hirz pur assar hai
على nafs nabi kher al-bashr hai

Ali ki zaat hai molod kaaba
shahadat gaah bhi khaaliq ka ghar hai

Ali to Mehram raaz kkhuda hai
usi ke samnay har khushk o tar hai

Ali ki madah hai you phone بالنذر
mudlal aur mukammal yeh khabar hai

nabi ki shaan khabar ilm hona
dar hai Ali mushkil kusha hi uss ka

على haq, haq Ali qoul peyambar jidhar ho ga Ali , haq bhi udhar hai

Ali ka noor hai noor ellahi
kkhuda ke noor ka yeh bhi samar hai

Mohammad aur Ali ke noor hi
Munawar جلوه Shams o Qamar hai

inhen ke Faiz khaaliq ne bakhsh
hamein kaynat behar o Bar hai yeh

Mohammad shara deen muqaddas
Ali haakim hai is ka khoob tar hai

nifaz deen ki khatir jahan mein
kkhuda ne unn ko di tegh Dosar hai

Ali hi har jagah Razm o وغا mein
Mohammad ke liye seenah par hai

kya maula Ali ne is jahan mein nizaam zulm ko zair o zair hai

Ali ke naam ka sadqa hai yeh
ravnt ko ہزیمیت ka jo dar hai

Comments

Popular posts from this blog

300+ Best Quotes in Urdu with Images 2023

300+ Best Quotes in Urdu with Images 2023 Iss Post ma ham apky Urdu kay 300 behtreen or nayaab Quotes share karen gay. Ap tamam se guzarish ha ki is post ko apny friends or family kay sath zaroor share karen. Or hamein shukurya ada karny ka moqa den. shukurya...  

Salam Ba Hazoor Imam Hussain

 Salam Ba Hazoor Imam Hussain مہماں بنا کے گھر سے بلایا حسین کو  پھر کربلا کے بن میں بسایا حسین کو یہ قافلہ تھا کوفے کی جانب رواں دواں  کر کربلا میں گھیر کے لایا حسین کو وہ دلبر بتول تھا اور جان مصطفى  کیا جرم تھا یہی کہ بتایا حسین کو عباس اور قاسم واکبر ہوئے شہید  اصغر نے تیر کھا کے رلایا حسین کو رقم سب چل بسے ظہیر و بریر و حبیب تک  کوئی نہیں رہا تھا سہارا حسین کو تنہا نکل رہا ہے حرم سے علی کا لال  گھیرے ہوئے ہے فوج صف آراء حسین کو وہ جنگ کی، کہ بدر کا منظر دکھا دیا  ہر اک نے الامان پکارا حسین کو اتنے میں ماہ دین گہن میں چلا گی  تیغ و تبر سے تیر سے مارا حسین کو نہر فرات پاس تھی پانی نہیں  پیاسا کیا شہید دل آرا حسین کو اے کربلا حسین نے تجھ کو لہو دیا  تو نے نہ ایک قطرہ پلایا حسین کو  زہرا کے کے گلبدن کا بدن بے کفن کو  تپتی زمین پر نہ چھپایا حسین کا جس دل میں عشق سبط نبی کا سما گیا  اس دل نے پھر کبھی نہ بھلایا حسین ن کو ناشاد ناتواں کو زیارت نصیب  یہ التماس بھیجی ہے مولا حسین کو mehmaan bana ke ghar se bulaya Hussain ko phir karbalaa ke ban mein basaayaa Hussain ko yeh qaafla tha kofe k

Salam Aqeedat

 Salaam Aqeedat مرے کلام پہ حمد و ثناء کا سایہ ہے  مرے کریم کے لطف و عطاء کا سایہ ہے میں حمد و منقبت و نعت لکھ رہا ہوں،  میرے تخیلات شاه ھدی کا سایہ ہے لکھا ہے حسن جہاں، اُس کو پڑھ چکا ہوں  حسن کیں پہ خامس آل عبا کا سایہ ہے خدا نے ہم کو نوازا حواس خمسہ سے  یہ ہم پہ پنجتن با صفا کا سایہ ہے کوئی مریض ہو لے جا رضا کے روضے پر  وہیں طبیب ہے، دار الشفاء کا سایہ ہے سفر ہو یا ہو حضر مجھ کو کوئی خوف نہیں  کہ مجھ پہ شاہ نجف مرتضی کا سایہ ہے علی امام مرا، اور میں غلام علی  علی کی شان پر تو لافتی کا سایہ ہے علی کا نام تو حرز بدن ہے اپنے لیے  علی کے اسم پہ رب علی کا سایہ ہے ن لطف احمد مرسل بفضل آل رسول  میں خوش نصیب ہوں مجھ پر ہما کا سایہ ہے وہی ہے نفس پیمبر وہی ہے زوج بتول  علی کی ذات پر ہی ہل اتی کا سایہ ہے ریاض خلد کے سردار شبر و شبیر  حدیث پاک ہے، خیر الوریٰ کا سایہ ہے سفیر کرب و بلا، زینب حزیں پہ سلام  وہ جس کے عزم پہ خیر النسا " کا سایہ ہے تری دعا کی اجابت میں دیر کیا ہو گی  علی کا نام لے! حاجت روا کا سایہ ہے نجات پائے گا ہر دکھ سے تو نہ رہ ناشاد  کہ تجھ پہ رحمت ارض و سماء کا سایہ ہے mar