Skip to main content

Salam Aqeedat

 Salaam Aqeedat مرے کلام پہ حمد و ثناء کا سایہ ہے  مرے کریم کے لطف و عطاء کا سایہ ہے میں حمد و منقبت و نعت لکھ رہا ہوں،  میرے تخیلات شاه ھدی کا سایہ ہے لکھا ہے حسن جہاں، اُس کو پڑھ چکا ہوں  حسن کیں پہ خامس آل عبا کا سایہ ہے خدا نے ہم کو نوازا حواس خمسہ سے  یہ ہم پہ پنجتن با صفا کا سایہ ہے کوئی مریض ہو لے جا رضا کے روضے پر  وہیں طبیب ہے، دار الشفاء کا سایہ ہے سفر ہو یا ہو حضر مجھ کو کوئی خوف نہیں  کہ مجھ پہ شاہ نجف مرتضی کا سایہ ہے علی امام مرا، اور میں غلام علی  علی کی شان پر تو لافتی کا سایہ ہے علی کا نام تو حرز بدن ہے اپنے لیے  علی کے اسم پہ رب علی کا سایہ ہے ن لطف احمد مرسل بفضل آل رسول  میں خوش نصیب ہوں مجھ پر ہما کا سایہ ہے وہی ہے نفس پیمبر وہی ہے زوج بتول  علی کی ذات پر ہی ہل اتی کا سایہ ہے ریاض خلد کے سردار شبر و شبیر  حدیث پاک ہے، خیر الوریٰ کا سایہ ہے سفیر کرب و بلا، زینب حزیں پہ سلام  وہ جس کے عزم پہ خیر النسا " کا سایہ ہے تری دعا کی اجابت میں دیر کیا ہو گی  علی کا نام لے! حاجت روا کا سایہ ہے نجات پائے گا ہر دکھ سے تو نہ رہ ناشاد  کہ تجھ پہ رحمت ارض و سماء کا سایہ ہے mar

Beautiful Words About Knowledge in English Urdu and Hindi

Beautiful Words About Knowledge in English Urdu and Hindi

علم ایک دولت ہے

کائنات کی سب سے بڑی دولت علم ہے۔ علم عجائبات قدرت میں سے ہے۔ اس میں ایٹم سے زیادہ قوت و توانائی اور حسن و نور ہے۔ یہ جمالیاتی تخلیقی قوت کا لامتناہی سرچشمہ ہے۔ صریر خامہ اور صور اسرافیل ہے ۔ اس میں تاثیر کن بھی ہے اس کا دم دم جبریل ، اس کا نفس نفس مسیحائی اور اس کی کلام میں موجودگی ، تاثیر برق حسن ہے جو دلوں کو ژندہ اور ظلمتوں کو دور کرتی ہے ۔ بیماروں کو شفا بخشتی ہے اور زندگی کے جادہ مستقیم کو روشن کرتی ہے۔ قلم کو پوری قوت سے تھاما جائے تو اللّٰہ کے بندوں کو خون آشام بشری چنگل سے چھڑایا جا سکتا ہے

قلم کافی ہے ارباب قلم کو

قلم دان وزارت کی، ہوس کیا

تم دولت کی حفاظت کرتے ہو اور علم تمہاری حفاظت کرتا ہے۔ دولت دشمن پیدا کرتی ہے اور علم دوست بناتا ہے ۔ دولت تقسیم کرنے سے کم ہوتی ہے اور علم بانٹنے سے بڑھتا ہے ، دولت مند کنجوس اور علامہ فیاض ہوتا ہے ۔ نیز علم کو چوری چکاری کا خطرہ نہیں ہوتا ہے ۔ دولت جتنی بھی ہو محدود ہوتا ہے اور علم لامحدود ہوتا ہے۔ دولت سے اکثر دل و دماغ پر سیاہی چھا جاتی ہے جبکہ علم دل و دماغ کو روشن کرتا ہے ۔ دولت نے فرعون و نمرود جیسے خدائی دعویدار پیدا کیے ہیں جبکہ علم نے انسانیت کو حقیقی اور سچے معبود سے متعارف کروایا ۔

جاہلیت جدیدہ ہو جاہلیت قدیمہ مغرب کی جہالت ہو یا مشرق کی ۔ بہر صورت انسانیت کے لیے سم قاتل ہے ۔ جہالت سب سے بڑی ظلمت اور سب سے بڑی تاریکی ہے ۔ شب دیجور کی تاریخی اس کے سامنے کوئی حیثیت نہیں رکھتی۔ اور یہ تاریکی نہ تلوار کی دھار سے ختم کی جا سکتی ہے نہ کلاشنکوف کی گولی سے بلکہ ایٹم بم بھی گرا دیا جائے تو یہ تاریکی دور نہیں ہوسکتی۔ آپ ایٹم بم سے بستیوں کو مسمار کر سکتے ہیں محلات زمین بوس کر سکتے ہیں ۔ روئے زمین سے نباتات اور انسان کو مٹا سکتے ہیں ۔ لیکن آپ ایٹم بم یا ہائیڈروجن بم سے جہالت کی تاریکی ختم نہیں کرسکتے ۔ لوہے کی تلوار سے دشمن کی گردن تو اڑائی جاسکتی ہے مگر اس کا سینہ روشن نہیں کیا جاسکتا ۔ تلوار کی دلیل سے دل میں وہ اطمینان پیدا ہو ہی نہیں سکتا جو علمی دلیل سے پیدا ہوتا ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ جس آدمی میں علم نہیں وہ آدمی نہیں جانور ہے اور جس گھر میں کوئی علم والا نہیں وہ گھر نہیں جانوروں کا مسکن ہے اور جس ملک میں رواج علم نہیں وہ ملک نہیں حیوانات کا جنگل ہے۔ کیونکہ علم وہ صفت ہے جو انسانوں کو جانوروں سے ممتاز کرتی ہے اور اسے شرف انسانیت بخشتی ہے ۔ علم وہ روشنی ہے جس سے جہالت کے اندھیرے چھٹ جاتے ہیں ۔ علم ایسا سدا بہار پھول ہے جس پر کبھی خزاں نہیں آتی ۔ علم ایسا رہبر اور مخلص دوست ہے جو کبھی بے وفائی نہیں کرتا۔ علم غریب کے پاس ہو چاہے امیر کے پاس اسے حقیقی عظمت و فوقیت دیتا ہے


ilm aik doulat hai

kaayenaat ki sab se barri doulat ilm hai. ilm ajaebaat qudrat mein se hai. is mein atom se ziyada qowat o tawanai aur husn o noor hai. yeh jamaliati takhleeqi qowat ka la-mutnahi sarchashma hai. Sareer Khamah aur soor Israfeel hai. is mein taseer kin bhi hai is ka dam dam Jibreel , is ka nafs nafs masehaie aur is ki kalaam mein mojoodgi, taseer barq-e husn hai jo dilon ko Zhanda aur zulmaton ko daur karti hai. bimaroon ko Shifa bakhshti hai aur zindagi ke jadah mustaqeem ko roshan karti hai. qalam ko poori qowat se thaama jaye to allah ke bundon ko khoon aasham bashri chungal se choraya ja sakta hai

qalam kaafi hai arbab qalam ko

qalam daan wizarat ki, hawas kya

tum doulat ki hifazat karte ho aur ilm tumhari hifazat karta hai. doulat dushman peda karti hai aur ilm dost banata hai. doulat taqseem karne se kam hoti hai aur ilm baantane se barhta hai, doulat mand kanjoos aur allama Fayaz hota hai. neez ilm ko chori chaakari ka khatrah nahi hota hai. doulat jitni bhi ho mehdood hota hai aur ilm laa-mehdood hota hai. doulat se aksar dil o dimagh par siyahi chhaa jati hai jabkay ilm dil o dimagh ko roshan karta hai. doulat ne firaon o namrud jaisay khudai dawaydaar peda kiye hain jabkay ilm ne insaaniyat ko haqeeqi aur sachey mabood se muta-arif karwaya .

ilm hai manzil Urfan o hadaayat ka chairag

ilm hai Maarfat anfs o Afaq ka naam

jahliat jdid_h ho jahliat Qadima maghrib ki jahalat ho ya mashriq ki. bahar soorat insaaniyat ke liye sm qaatil hai. jahalat sab se barri zulmat aur sab se barri tareqi hai. shab deejor ki tareekhi is ke samnay koi hesiyat nahi rakhti. aur yeh tareqi nah talwar ki dhaar se khatam ki ja sakti hai nah kalashnikov ki goli se balkay atom bomb bhi gira diya jaye to yeh tareqi daur nahi hosakti. aap atom bomb se bustiyon ko masmaar kar satke hain mehlaat zameen bose kar satke hain. roye zameen se nabataat aur insaan ko mita satke hain. lekin aap atom bomb ya hydrogen bomb se jahalat ki tareqi khatam nahi kar saktay. lohay ki talwar se dushman ki gardan to udai ja sakti hai magar is ka seenah roshan nahi kiya ja sakta. talwar ki Daleel se dil mein woh itminan peda ho hi nahi sakta jo Ilmi Daleel se peda hota hai. haqeeqat yeh hai ke jis aadmi mein ilm nahi woh aadmi nahi janwar hai aur jis ghar mein koi ilm wala nahi woh ghar nahi janwaron ka maskan hai aur jis malik mein rivaaj ilm nahi woh malik nahi hewanat ka jungle hai. kyunkay ilm woh sift hai jo insanon ko janwaron se mumtaz karti hai aur usay Sharf insaaniyat bakhshti hai. ilm woh roshni hai jis se jahalat ke andheray chaatt jatay hain. ilm aisa sada bahhar phool hai jis par kabhi khizaa nahi aati. ilm aisa rehbar aur mukhlis dost hai jo kabhi be wafai nahi karta. ilm ghareeb ke paas ho chahay Ameer ke paas usay haqeeqi Azmat o foqiat deta hai

Comments

Popular posts from this blog

300+ Best Quotes in Urdu with Images 2023

300+ Best Quotes in Urdu with Images 2023 Iss Post ma ham apky Urdu kay 300 behtreen or nayaab Quotes share karen gay. Ap tamam se guzarish ha ki is post ko apny friends or family kay sath zaroor share karen. Or hamein shukurya ada karny ka moqa den. shukurya...  

Salam Ba Hazoor Imam Hussain

 Salam Ba Hazoor Imam Hussain مہماں بنا کے گھر سے بلایا حسین کو  پھر کربلا کے بن میں بسایا حسین کو یہ قافلہ تھا کوفے کی جانب رواں دواں  کر کربلا میں گھیر کے لایا حسین کو وہ دلبر بتول تھا اور جان مصطفى  کیا جرم تھا یہی کہ بتایا حسین کو عباس اور قاسم واکبر ہوئے شہید  اصغر نے تیر کھا کے رلایا حسین کو رقم سب چل بسے ظہیر و بریر و حبیب تک  کوئی نہیں رہا تھا سہارا حسین کو تنہا نکل رہا ہے حرم سے علی کا لال  گھیرے ہوئے ہے فوج صف آراء حسین کو وہ جنگ کی، کہ بدر کا منظر دکھا دیا  ہر اک نے الامان پکارا حسین کو اتنے میں ماہ دین گہن میں چلا گی  تیغ و تبر سے تیر سے مارا حسین کو نہر فرات پاس تھی پانی نہیں  پیاسا کیا شہید دل آرا حسین کو اے کربلا حسین نے تجھ کو لہو دیا  تو نے نہ ایک قطرہ پلایا حسین کو  زہرا کے کے گلبدن کا بدن بے کفن کو  تپتی زمین پر نہ چھپایا حسین کا جس دل میں عشق سبط نبی کا سما گیا  اس دل نے پھر کبھی نہ بھلایا حسین ن کو ناشاد ناتواں کو زیارت نصیب  یہ التماس بھیجی ہے مولا حسین کو mehmaan bana ke ghar se bulaya Hussain ko phir karbalaa ke ban mein basaayaa Hussain ko yeh qaafla tha kofe k

Salam Aqeedat

 Salaam Aqeedat مرے کلام پہ حمد و ثناء کا سایہ ہے  مرے کریم کے لطف و عطاء کا سایہ ہے میں حمد و منقبت و نعت لکھ رہا ہوں،  میرے تخیلات شاه ھدی کا سایہ ہے لکھا ہے حسن جہاں، اُس کو پڑھ چکا ہوں  حسن کیں پہ خامس آل عبا کا سایہ ہے خدا نے ہم کو نوازا حواس خمسہ سے  یہ ہم پہ پنجتن با صفا کا سایہ ہے کوئی مریض ہو لے جا رضا کے روضے پر  وہیں طبیب ہے، دار الشفاء کا سایہ ہے سفر ہو یا ہو حضر مجھ کو کوئی خوف نہیں  کہ مجھ پہ شاہ نجف مرتضی کا سایہ ہے علی امام مرا، اور میں غلام علی  علی کی شان پر تو لافتی کا سایہ ہے علی کا نام تو حرز بدن ہے اپنے لیے  علی کے اسم پہ رب علی کا سایہ ہے ن لطف احمد مرسل بفضل آل رسول  میں خوش نصیب ہوں مجھ پر ہما کا سایہ ہے وہی ہے نفس پیمبر وہی ہے زوج بتول  علی کی ذات پر ہی ہل اتی کا سایہ ہے ریاض خلد کے سردار شبر و شبیر  حدیث پاک ہے، خیر الوریٰ کا سایہ ہے سفیر کرب و بلا، زینب حزیں پہ سلام  وہ جس کے عزم پہ خیر النسا " کا سایہ ہے تری دعا کی اجابت میں دیر کیا ہو گی  علی کا نام لے! حاجت روا کا سایہ ہے نجات پائے گا ہر دکھ سے تو نہ رہ ناشاد  کہ تجھ پہ رحمت ارض و سماء کا سایہ ہے mar